193

سعودی عرب میں پہلی بار میڈیا ایوارڈ اور ورکشاپ کا آغاز آج سے ہو گیا ہے جو دو روز تک جاری رہے گا

سعودی عرب میں پہلی بار میڈیا ایوارڈ اور ورکشاپ کا آغاز آج سے ہو گیا ہے جو دو روز تک جاری رہے گا

میڈیا ایوارڈ اور ورکشاپ میں پاکستان سمیت 32 ممالک کے ایک ہزار سے زیادہ صحافی شرکت کر رہے ہیں

کانفرنس کا مقصدمیڈیا سرمایہ کاری ، اشتہاری محصول اور میڈیا کے میدان سے وابستہ دیگر امور اور اس سے درپیش چیلنجوں کا بھی جائزہ لینا ہے-

ورکشاپ میں 50 سے زائد سیشنز رکھے گیے ہیں جن کے ذریعے میڈیا انڈسٹری کے اپنے تمام آڈیو ویوژن ، پرنٹ اور ڈیجیٹل شکلوں پر تبادلہ خیال کیا جائے گا اور بڑھتی ہوئی تکنیکی ترقی اور سوشل میڈیا کے پھیلاؤ کی روشنی میں میڈیا کے مقامی اور بین الاقوامی تجربات اور چیلنجوں کا جائزہ بھی لیا جائے گا ،اور ڈیجیٹل کی موجودگی کو نمایاں کرنے کے علاوہ ٹاک شوز اور ان کی قبولیت اور مسائل کے تجربے اور پیشہ ورانہ کامیابی کے تقاضوں اور کارکردگی اور ساکھ سے متعلق امور اور افواہوں کے خلاف جنگ اور مجموعی طور پر ہونے والے واقعات پر اثرات ،پر بھی بحث کی جایے گی اور فورم کے مقررین میں وزراء ، عہدیداروں اور میڈیا کے فیصلہ ساز شامل ہیں ، جن میں ایچ آر ایچ پرنس عبد العزیز بن ترکي الفیصل ، جنرل اتھارٹی برائے کھیل برائے تجارت ، وزیر تجارت و سرمایہ کاری ، ڈاکٹر ماجد القصبي ، وزیر خزانہ ، مسٹر محمد الجدعاني ، وزیر اطلاعات ، مسٹر ترکي الشبانہ ، شامل ہیں۔ جنرل اتھارٹی برائے انٹرٹینمنٹ کے چیئرمین مسٹر ترکی الشیخ ، مسلم ورلڈ لیگ کے سکریٹری جنرل شیخ ڈاکٹر محمد العيسى ، دیگر شامل ہیں

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں