85

جدہ (ملک تصور ) عرب میں پاکستان کے سفیر راجہ علی اعجاز نے سعودی میڈیا کے ایڈیٹرز اور صحافیوں کو جموں و کشمیر میں قابض فوج اور انسانی حقوق کی بگڑتی ہوئی صورتحال اور مظالم پر بریفنگ دی۔ بریفنگ کے آخر میں سوال وجواب کا سیشن بھی ہوا

سعودی عرب میں پاکستان کے سفیر راجہ علی اعجاز نے تنازعہ کشمیر کے آغاز پرروشنی ڈالتے ہوئے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردادوں پرکا ذکر کیا جس میں جموں و کشمیر کے عوام سے حق خود ارادیت کا وعدہ کیا گیا تھا۔ سفیر نے بتایا کہ بھارتی وزیر اعظم نہرو نے جموں و کشمیر کے عوام کی مرضی کے مطابق ریاست کی تقدیر کا فیصلہ کرنے کا وعدہ کیا تھا۔ لیکن کشمیریوں کو دھوکہ دیا گیا۔ بہر حال ، کشمیری آج تک بہادری سے اپنی حقوق کے لئے جدوجہد کر رہے ہیں۔ سفیر نے کہا کہ آرٹیکل 370 کی منسوخی کا بنیادی مقصد کشمیر کی آبادی اور جغرافیہ کو تبدیل کرنا ہے۔ تاہم اس عمل کا بدترین حصہ کشمیری عوام کی نقل و حرکت اور مواصلات پر پابندی ہے۔ آٹھ لاکھ کشمیری گھروں میں قید ہیں۔ سفیر نے اس عزم کا اعادہ کیا کہ پاکستان کشمیری بھائیوں کی سیاسی ، سفارتی اور اخلاقی مدد جاری رکھے گا اور کسی کو بھی پاکستان کے عزم پر شک و شبہ نہیں ہونا چاہئے۔ اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں مسئلہ کشمیر پر وزیر اعظم عمران خان کی غیر متزلزل حمایت پاکستانیوں اور کشمیریوں کے جذبات کی نمائندگی کرتی ہے۔ راجہ علی اعجاز نے خادم حرمین شریفین شاہ سلمان بن عبد العزیز اور ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کا کشمیر کے مظلوم عوام کی حمایت پر ان کا شکریہ ادا کیا۔ سفیر نے جموں و کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کے خلاف آواز اٹھانے پر اسلامی تعاون تنظیم اور ممبر ممالک کا بھی شکریہ ادا کیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں